شوگر:آپ کوجو ایوارڈ ملتےرہتے ہیں اورساتھ کیش بھی ملتا ہے،کیایہ بھی آپ ادارے کودےدیتے ہیں۔

عبدالستارایدھی:میں سب چیزوں کا حساب کتاب رکھتاہوں، دنیا بھرمیں ادارے چلارہا ہوں،ایدھی فیملی مشن کےنام سےاپنے پیسوں سے جگہ خرید کراسے وقف کردیتا ہوں،جیسے کینیڈا میں 10لاکھ ڈالر میں جگہ خریدی، خیراتی ٹرسٹ قائم کیااورنان ریذیڈنٹ کے طورپر رجسڑڈ کرایا، افغانستان میں بھی 4,3مرتبہ اِسی سلسلےمیں گیا۔ ایوارڈ کے پیسے کواِسی کام میں استعمال کردیناہوں۔

شوگر:آپ نے بتایاکہ صحت کےبارے میں کام کرنےکے بارےمیں سوچا تھا،لہذاآپ اپنی صحت کا خیال بھی رکھتے ہوں گے؟

عبدالستارایدھی:مجھے شوگرکی بیماری ہے۔ کبھی کبھارغصےمیں کہا کرتا تھا کہ غریبوں کی مدد کے لیےادارہ کھول لو 15,10ملازم رکھ لووہ آپ کو ٹینشن دیں گے،ایماندار،مختی اورسادگی سےزندگی گُزارنے والےنہیں ہوں گے،آپ چیختےچلاتے اوراپنا دل جلاتے رہیں گےاور بالآخرآپ کوشوگرہو جائے گی۔ شوگر:آپ کو کب سے ذیابیطس کی شکایت ہے؟ عبدالستارایدھی :مجھے 22سال سے ذیابیطس ہے،دوا نہیں لیتا،البتہ یہ ایک چیزہے جسے چوستارہتا ہوں۔

شوگر :لوگ توآپ کومولوی سمجھتے کیاآپ موسیقی وغیرہ کودرست خیال کرتے ہیں؟

عبدالستارایدھی:نہیں میں مولوی نہیں ہوں،لوگ مجھے طالبان بھی سمجھتے ہیں،امریکہ والوں نے بھی طالبان سمجھ کرپکڑلیا تھا۔

شوگر :آپ کِس گلوکار کوسنتے ہیں؟

عبدالستارایدھی :میں نورجہاں اور سہگل کےگانے سنتاہوں۔

شوگر:کبھی جوانی مین دلیپ کمارکی کوئی فلم بھی دیکھی؟

عبدالستار ایدھی:جی نہیں!البتہ پرانے گانوں کی کیسٹین بناکرمجھے بھیج دیتےہیں ،وہ سنتا ہوں۔

شوگر :بیوی بچوں کےبارے میں بتائیں کہ آپ کی گھریلو زندگی کیسی ہے؟

عبدالستارایدھی:باکل ٹھیک ٹھاک ہے۔ میری 3شادیاں ہوئی ہیں، پہلی پاکستان میں آتے ہی ہوئی تھی۔1975 ؁ میں شادی کی جو 11,10سال چلی،اِس کےبعد بیوی نےکہا آپ کےساتھ یہ خدمتِ خلق کاکام نہیں کرسکتی۔1966 ؁ میں بلقیس سے شادی کی،انہوں نےآج تک میرا ساتھ دیا کیونکہ اُنہیں پہلےسے پتا تھا میں یہ کام ہوں۔ تیسری شادی اس کے بعدکی کیونکہ ہمارے ہاں اولاد نہیں تھی ۔میں اس چیزکا قائل ہوں کہ شادی کرکے عورت کو اپنے کنڑول میں لےلو اوراپنی ٹیم کا ممبربنالو۔ یعنی شادی کرکے اسےاپنے ساتھ کام لگا لیتا ہوں۔اسلام درحقیقت ایک سوشل لائف ہےہم نےاس پہلو سے کبھی سوچاہی نہیں۔ ویسے بھی اسلام نے 4شادیوں کی اجازت دی ہوئی ہیاورخدمت کاجزبہ ہوتو مزید بھی کرسکتے ہیں۔

شوگر:توآپ نے تیسری بیوی سےوہ پیسہ نہیں نکلوایا؟

عبدالستارایدھی :ہمارے پاس ثبوت نہیں ہے،عدالت پروف مانگتی ہے،قرآن پروف مانگتا ہے۔ لیکن خداکی طرف سےاسے بھگتنا پڑے گاہمیں بہت رنج ہورہا ہے کہ ہم نے کیاقدم اٹھایا؟2عورتوں نےہمارے ہاں اپنی چوری کوقبول کیا اوران لوگوں نےپیسہ واپس دیناشروع کردیا تھا۔

شوگر:اس تلخ تجربے کے بعد چوتھی شادی کا ارادہ نہیں کیا؟

عبدالستارایدھی:جع نہیں !اِس تجربے کےبعد میں نےایسا کوئی ارادہ نہیں۔جب تیسری بیوی نےیہاں سے ہٹ کرکڑوڑوں روپےکی جائیدادیں اوردکانیں وغیرہ خریدیں تومیں نےاندازہ لگایا کہ میرےہاں 15,14سال کام کیاتو یہ گیراج میں رہتی ھی،اس نے کافی پیسہ یہاں سے چوری کیا ہوگا۔

شوگر:آپ کی بیوی کوآپ کی شادیاں برُی نہیں لگتیں ؟

عبدالستارایدھی: نہیں اُن کےخیالات نہایت اچھے ہیں لیکن عام طورعورت تنگ نظرہوتی ہے کہیں نہ کہیں غصہ نکال لیتی ہے۔

Page:  | 2 | 3 | 4 | 5 | 6