ذیابیطس میں آپ تنہا نہیں!
باب

تذبذب

2

کچھ عرصہ سے جاوید غیر معمولی تھکاوٹ اور طبیعت پر بوجھ محسوس کر رہا تھا۔ جہاں وہ پہلے مسلسل آٹھ دس گھنٹے بلاتکان کام کرتا تھا وہاں اب مشکل سے دو تین گھنٹے خود کو کام پر مجبور کر پاتا۔ رات میں نیند بھی ٹھیک طرح سے نہ آتی، پیاس اور پیشاب کی کثرت کا عمل دن میں بھی جاری رہتا۔

شروع میں جاوید نے سوچا شاید دفتر میں حالیہ کشمکش کی وجہ سے وہ دباؤ کا شکار ہے۔ پھر اسے یہ بھی خیال آیا شاید کام کی زیادتی اس کی صحت کو متاثر کر رہی ہے۔ کبھی سوچتا شاید وہ بڑھاپے کا شکار ہو رہا ہے حالانکہ اس کی عمر 45 سال کے لگ بھک تھی۔ اس نے بارہا ان سوچوں سے پیچھا چھڑانے کی کوشش کی لیکن ناکام رہا چنانچہ اس نے ان خیالات اور احساسات کو نظر انداز کرنا شروع کر دیا۔

دراصل وہ ڈاکٹروں اور ہسپتالوں سے ہمیشہ خوفزدہ رہا تھا۔

Comments

comments