ذیابیطس میں آپ تنہا نہیں!
باب

بطخیں شور مچاتی ہیں

جاوید نے پہلے اچھی طرح سیکھ لینے تک انتظار کیا۔ اس نے فرصت، ملنے کا بھی انتظار نہیں کیا کیونکہ وہ یہ جانتا تھا اگر وہ انتظار کرتا رہے گا تو فرصت کبھی نہیں ملے گی۔ اگلے دن ہی اس نے یہ سب کچھ کرنا شروع کر دیا۔ جاوید نے اپنی بیوی اور بچوں کو ذیابیطس کے بارے میں تفصیل سے بتایا۔ جاوید نے اعلان کیا کہ اس ہفتے سب اکٹھے مل کر ذیابیطس کے علاج کے ہدف حاصل کرنے کیلئے کام کریں گے اور جب ہم اس میں کامیاب ہو جائیں گے تو رات کا کھانا باہر کھائیں گے۔

سب نے فیصلہ کیا کہ مناسب غذا پر جاوید کی خوصلہ افزائی کریں گے اور اگر وہ جاوید کو بدپرہیزی کرتے دیکھیں گے تو انہیں ان کی غلطی بتائیں گے اور اپنے احساسات سے آگاہ کریں گے۔ جاوید کے بڑے صاحبزادے جہانگیر نے ان کے ساتھ سیر پر جانے کا پروگرام بنایا، سب لوگ بہت گرم جوشی محسوس کر رہے تھے۔

ان تمام باتوں کے باوجود پہلا ہفتہ جاوید کیلئے آسان نہیں تھا۔ جاوید کو پھیکی چائے کا مزہ نہیں آ رہا تھا۔ اسی طرح وہ کھانے کی مقدار پر پابندی کی وجہ سے دِقت محسوس کرتا رہا۔ کئی دفعہ ایسا ہوتا کہ وہ دو کھانوں کے درمیان کی ہلکی غذا کھانا بھول جاتا، کئی دفعہ وہ زیادہ کھا جاتا۔

جاوید کیلئے ورزش کرنا بھی آسان ثابت نہ ہوا۔ گھر میں اپنے بیوی بچوں اور ملازموں کی موجودگی شروع میں جاوید کیلئے شرم کا باعث بنی رہی تاہم ہفتے کے آخر تک جاوید نے کامیابی سے اپنے اکثر ہدف حاصل کر لئے۔

ہمیں نئے راستوں پر چلتے رہنے کیلئے
اپنے چاہنے والوں کی مدد چاہییے

Comments

comments