ذیابیطس میں آپ تنہا نہیں!
باب

تیسرا راز: تنبیہہ

2

جاوید کو یہ سن کر اچانک دھچکا لگا۔ اس نے کہا ’’آپکا مطلب ہے کہ ڈاکٹر خرم سے آپ کا ٹاکرا تبھی ہوتا ہے جب آپ کوئی غلطی کر بیٹھیں؟‘‘

’’جی ہاں، البتہ بالکل ایسا نہیں مگر قریباً ایسا ہے‘‘ بلقیس بیگم نے کہا۔

’’مگرانہیں کیسے پتا چلتا ہے کہ آپ کوئی غلطی کر بیٹھی ہیں؟‘‘ جاوید نے کہا۔

’’میری HbAloرپورٹ چغلی کھاتی ہے، پھر ان کے اور ذرائع بھی ہیں۔‘‘

’’مگر یہاں تو اپنی ذمہ داریاں پوری کرتے ہوئے پکڑنے کا رواج ہے؟‘‘

’’یہ بھی ہے‘‘ بلقیس بیگم نے زور دیتے ہوئے کہا ’’مگر آپ کو میرے بارے میں کچھ جاننا پڑے گا میں ماڈل ڈایابیٹک ہوں۔‘‘

’’کیا سب مریضوں کے ساتھ ایک جیسا سلوک نہیں کیا جاتا؟‘‘

’’قطعی نہیں! مختلف مریضوں کیلئے مختلف حکمت عملی کی ضرورت ہوتی ہے، بعض اوقات تو ایک مریض کے ساتھ بھی وقت کے ساتھ ساتھ حکمت عملی بدلنی پڑتی ہے، آپ یہاں مساوات کی توقع نہ رکھیں۔ اس سے زیادہ غیر مساوی کچھ نہیں کہ غیر مساوی لوگوں کے ساتھ مساوی سلوک کیا جائے۔‘‘

’’کیا ڈاکٹر خرم کبھی آپ کو سراہتے بھی ہیں؟‘‘ جاوید نے پوچھا۔

Comments

comments