ذیابیطس میں آپ تنہا نہیں!
باب

تیسرا راز: تنبیہہ

5

’’ وہ اس کیلئے کتنا وقت لیتے ہیں؟‘‘ جاوید نے پوچھا۔

’’قریباً تیس سیکنڈ مگر کبھی یہ چند سیکنڈ بھی صدیوں پر محیط ہوتے ہیں‘‘ بلقیس بیگم نے رازداری سے کہا۔

’’اور پھر کیا ہوتا ہے؟‘‘جاوید نے اپنی کرسی کے کونے پر سرکتے ہوئے پوچھا۔

’’وہ کچھ لمحوں کیلئے خاموشی کے ساتھ اپنے کہے ہوئے الفاظ کو سننے والے کے ذہن میں اترنے دیتے ہیں، بلا شبہ وہ الفاظ گہرائی میں اتر جاتے ہیں۔‘‘

’’پھر؟‘‘ جاوید نے پوچھا۔

’’پھر وہ مجھے بتاتے ہیں کہ وہ مجھے کتنا ذمہ دار سمجھتے ہیں، اور میرے کس قدر معترف ہیں، وہ اس بات کو یقینی بناتے ہیں کہ میں سمجھ لوں کہ ان کی ناراضگی کے پس پردہ بے پناہ احترام ہے، وہ کہتے ہیں کہ اس بد پرہیزی سے قطع نظر میرا عمومی برتاؤ بے داغ ہے، وہ جلد ہی مجھے سے دوبارہ ملنے کے بارے میں اشتیاق کا اظہار کرتے ہیں بشرطیکہ میں اچھی طرح یہ بات جان لوں کہ وہ مجھ سے دوبارہ بدپرہیزی کی توقع نہیں رکھتے۔‘‘

جاوید نے بات کاٹتے ہوئے کہا ’’یہ چیز آپ کو انتہائی محتاط رہنے پر مجبور کرتی ہو گی؟‘‘

Comments

comments