ذیابیطس میں آپ تنہا نہیں!
باب

تیسرا راز: تنبیہہ

6

’’یقینا‘‘ بلقیس بیگم نے پرزور طریقے سے اثبات میں سر ہلایا’’ سب سے پہلے وہ عموماً مجھے کوتاہی کے فوراً بعد تنبیہہ کرتے ہیں، دوسرے، مجھے میری غلطی اچھی طرح واضح کر کے بتاتے ہیں، یوں لگتا ہے کہ وہ صورتحال پر چھا گئے ہیں، میں جان لیتی ہوں کہ میں بد پرہیزی کر کے بچ نہیں سکتی، تیسرے، وہ مجھ پر میری ذات کے حوالے سے حملہ نہیں کرتے بلکہ صرف میری کارکردگی پر بات کرتے ہیں اور مجھے اپنا دفاع کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہوتی، میں ان پر یا کسی اور شخص پر الزام لگا کر اپنی غلطی کو صحیح ثابت کرنے کی کوشش نہیں کرتی، میں جانتی ہوں کہ وہ حق سچ کی آواز ہیں اور چوتھی بات یہ کہ وہ مستقل مزاج ہیں۔‘‘

’’کیا اس کا مطلب یہ ہے کہ چاہے ان کے دیگر معاملات احسن طریقے سے چل رہے ہوں، وہ آپ کو آپ کی غلطی پر تنبیہہ ضرور کرتے ہیں۔‘‘

’’جی ہاں‘‘ انہوں نے جواب دیا۔

’’یہ سلسلہ کتنی دیر چلتا ہے؟‘‘ جاوید نے پوچھا۔

’’عام طور پر ایک منٹ تک‘‘ اس نے کہا ’’اور جب یہ ایک منٹ ختم ہو جاتا ہے تو یہ سلسلہ بھی ختم ہو جاتا ہے۔ یہ تنبیہہ مختصر ہوتی ہے مگر میں گارنٹی سے کہتی ہوں کہ آپ اسے بھول نہیں سکتے….اور پھر عام طور پر دوبارہ ویسی غلطی نہیں کرتے۔‘‘

’’میرا خیال ہے کہ جو کچھ آپ کہنا چاہ رہی ہیں میں وہ سمجھ گیا ہوں‘‘ جاوید نے کہا۔

Comments

comments