ذیابیطس میں آپ تنہا نہیں!
باب

تیسرا راز: تنبیہہ

اگلی صبح جاوید اپنی بیوی کے ہمراہ بلقیس بیگم کے گھر پہنچا۔ قریباً ساٹھ سالہ، بہت اسمارٹ اور خوش لباس خاتون نے ان کا خیر مقدم کیا، معمول کی طرح اس نے وہی جملہ سنا’’ آپ ڈاکٹر خرم سے ملے ہیں، بڑی زبردست شخصیت ہے ان کی، کیوں ایسا ہی ہے نا؟‘‘ مگر اب جاوید اس بات کا اتنی اچھی طرح قائل ہو چکا تھا کہ دل سے کہہ سکے’’ہاں! ایسا ہی ہے!‘‘

’’کیا آپ خالد صاحب سے بھی ملے ہیں؟‘‘

’’جی ہاں۔‘‘

’’کیا انہوں نے اپنے ماڈل ڈایابیٹک ہونے کے متعلق بتایا؟‘‘ بلقیس بیگم نے پوچھا۔

’’میں ان کے متعلق یہی کچھ تو سنتا آ رہا ہوں‘‘ جاوید نے ہنستے ہوئے کہا۔

’’آپ اس پر مکمل یقین کر سکتے ہو، وہ تو عام لوگوں سے بھی زیادہ صحت مند ہیں۔ ‘‘

’’کیا آپ کا ڈاکٹر خرم سے رابطہ رہتا ہے‘‘ جاوید نے کہا۔

’’حتمی طور پر بہت ہی کم کم، سوائے اس وقت کے جب میں کوئی غلطی کر بیٹھوں؟‘‘ بلقیس بیگم نے کہا۔

Comments

comments