ذیابیطس میں آپ تنہا نہیں!
باب

ذیابیطس سے بحالی کی ا ب پ

ہسپتال سے باہر نکلتے ہوئے خالد سے ملاقات ہو گئی جاوید انہیں بہت تپاک سے ملا۔

” ذیابیطس پر قابو پانے میں کوئی مشکلات تو پیش نہیں آ رہیں؟” خالد نے کہا۔

” میرا خیال ہے سب سے بڑی مشکل ذیابیطس کے طرزِ زندگی کو مہارت سے روز مرہ امور میں سمونا ہے تاکہ یہ سمجھنا آسان ہو جائے کہ کس وقت مجھے کیا کرنا ہے؟ مثال کے طور پر: اکثر میں دوا بڑھاتا تھا حالانکہ اس وقت مجھے زیادہ پرہیز اور ورزش کی طرف زیادہ توجہ دیتا تھا اور اب مجھے خیال آتا ہے کہ اس وقت مجھے تو دوائی کی مقدار کم کرنی چاہیے تھی۔”

” جب تک میں نے اب پ نہیں سیکھی تھی میرے ساتھ بھی یہی مسئلہ تھا ” خالد نے کہا۔ میں جانتا ہوں کہ آپ سکول والی اب پ کی بات تو نہیں کر رہے” جاوید کہنے لگا ”کھل کر بتائیے آپ کہنا کیا چاہتے ہیں؟”

” واقعی میں حروف تہجی کا تذکرہ نہیں کر رہا بلکہ یہ اب پ ذیابیطس سے بحالی میں بنیادی باتو ں کی طرف لوٹنے کا ایک راستہ ہے” خالد نے کہا۔

”لگتا ہے مجھے بھی ا ب پ اچھی طرح سیکھنے کی ضرورت ہے۔”

” آپ ایسا کیوں نہیں کرتے کہ ڈاکٹر خرم سے ملیں” خالد نے کہا ” وہ مریضوں کو ا ب پ سکھانے کے ماہر ہیں۔”

Comments

comments